پولیتھین بیگ پر فوری پابندی نہ لگانے کی پنجاب حکومت کی استدعا منظ

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے پولیتھین بیگ پرفوری پابندی نہ لگانے کی پنجاب حکومت کی استدعا منظور کرلی اور حکومت سےاحتیاطی تدابیرکی رپورٹ طلب کرلی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پولیتھین بیگ کےاستعمال پر پابندی کیس سماعت کی۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ پولی تھین بیگ صحت کے لیے انتہائی خطرناک ہیں، شاپنگ بیگز کے استعمال سے خطرناک بیماریاں پھیل رہی ہیں۔

ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا اگر پولی تھین بیگز پر فوری پابندی لگتی ہے تو صنعت بند ہو جائے گی، جس سے معیشت کو نقصان ہوگا، جسٹس مسعود جہانگیر نے استفسار کیا ہمیں بتائیں اگر ہم حکم امتناعی جاری نہیں کرتے تو آپ اپنے طور پر کیا احتیاطی تدابیر کریں گے۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے کہا کہ ہمیں وقت دیا جائے تاکہ تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لے کر اس سے متعلق پلان ترتیب دیا جائے۔

عدالت نے مزید استفسار کیا کہ کیا پولی تھین بیگز پر پابندی کے لیے قانون پائپ لائن میں ہے، جس پر چیف سیکرٹری پنجاب نے کہا کہ قانون سازی کے لیے مزید وقت درکار ہے۔

جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے قرار دیا کہ اس بیگ کا استعمال بڑے پیمانے پر شہریوں کو نقصان پہنچا رہا ہے، کیا اس معاملے پر کوئی اتھارٹی ہے جو پولی تھین بیگ کا معیار کر چیک کر سکے۔

ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا کہ ہمیں احتیاطی تدابیر کے لیے 4 ہفتوں کی مہلت دی جائے، عدالت مطمئن نہ ہو تو اپنا فیصلہ سنا دے۔

عدالت نے پولی شاپنگ بیگز پر فوری پابندی عائد نہ کرنے کی پنجاب حکومت کی استدعا منظور کرتے ہوئے وفاق اور پنجاب حکومت سے احتیاطی تدابیر کی رپورٹ طلب کر لی۔

یاد رہے گذشتہ روزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے موسمیاتی تبدیلی کے موضوع پر منعقدہ تقریب سے خطاب میں  وفاقی دار الحکومت اسلام آباد میں 14اگست یوم آزادی کے روز سے پلاسٹک کے بیگ کے استعمال پر پابندی کا اعلان کیا تھا۔

Comments

comments




Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *